بھارت میں مودی حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کیخلاف احتجاج

ہندوستان میں کرنسی کے بڑے نوٹوں کو کیش کرنے پر عائد متنازعہ پابندی کے خلاف ہزاروں لوگوں نے ملک گیر احتجاج کیا جبکہ حزب اختلاف کی جماعتوں نے اس کو ‘مالی ایمرجنسی’ کی وجہ قرار دیا۔ ہندوستان کے وزیراعظم نریندرامودی کی جانب سے تین ہفتے قبل 86 فی صد بڑے نوٹ مالی گردش سے باہر نکالنے کے حیران کن فیصلے کے اثرات سے پورا ملک باہر نہیں نکل سکا۔

مغربی بنگال کے شہر کولکتہ میں 25 ہزارکے قریب لوگ سڑکوں پر نکل آئے جبکہ بائیں بازوسے تعلق رکھنے والے وزیراعلیٰ ماماتا بینر جی نے خبردار کیا کہ اگر یہ پابندی جاری رہی تو احتجاج بڑھا دیا جائے گا۔ پولیس کے مطابق ہندوستان کے ایک اور تجارتی مرکز ممبئی میں بھی ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے احتجاج کیا۔ حزب اختلاف کی پارٹی کانگریس کے رہمنا منیش تیواری کا کہنا تھا کہ ‘ہم حکومت کی جانب سے لگائی گئی غیراعلانیہ مالی ایمرجنسی کے خلاف احتجاج کر رہے ہیں کیونکہ پورے ملک کا محنت کش طبقہ اس سے متاثر ہوا ہے جبکہ یہ فیصلہ غیرقانونی ہے’۔

 

 

 

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s