عافیہ صدیقی کی رہائی ایک ’خط‘ کی دوری پر

امریکا میں قید ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی اور وطن واپسی کی جو ایک آسان راہ دکھائی دے رہی ہے اس کی مدت نہایت کم بچی ہے لیکن افسوسناک امر یہ ہے کہ ایوان بالا میں روایتی خاموشی چھائی ہوئی ہے۔ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کی رہائی محض ایک ’خط‘ کی محتاج ہے جو صدر مملکت یا وزیراعظم پاکستان کی جانب سے امریکی حکومت کو لکھا جائے گا۔ واضح رہے کہ مارچ 2016 میں عافیہ کے امریکی اٹارنی اسٹیفن ڈاؤنز سے امریکی انتظامیہ نے رابطہ کرکے کہا تھا کہ صدر بارک اوباما اپنی دوسری صدارتی مدت مکمل کرنے سے قبل قیدیوں کی سزائیں معاف کرکے رہائی دیں گے لیکن چونکہ ڈاکٹر عافیہ پاکستان شہری ہیں اس لیے ان کی رہائی کے لیے صدر مملکت یا وزیراعظم پاکستان کا ایک خط لازمی طور پر درکار ہوگا۔

چونکہ بارک اوباما کی صدارتی مدت 20 جنوری 2017 کو مکمل ہورہی ہے اس لیے صائب ہوگا کہ حکومت پاکستان اس معاملے کو نمٹاتے ہوئے ایک خط لکھنے کی ’زحمت‘ گوارا کر ہی لے تاکہ قوم کی بیٹی کو وطن واپس لایا جاسکے۔ عافیہ وہ مظلوم پاکستانی شہری ہے جسے اس کے تین معصوم بچوں سمیت کراچی سے اغوا کرکے امریکیوں کے حوالے کیا گیا تھا، عافیہ صدیقی کو ایک امریکی عدالت نے 86 برس کی سزا سنائی، دوران اسیری ان سے متعلق افسوسناک خبریں میڈیا کی زینت بنیں، بعض ماہرین قانون نے اسے انصاف کا قتل قرار دیا تھا۔ عافیہ صدیقی کے خلاف مقدمہ پر صرف پاکستانی ہی نہیں بلکہ کئی امریکی اور یورپی صحافیوں نے بھی خامہ فرسائی کی ہے جس میں برطانوی نومسلم صحافی اور مصنف ایوان رڈلی نے غیر معمولی تجزیاتی رپورٹس لکھیں۔ ایوان رڈلی کا کہنا ہے کہ عافیہ کیس میں امریکا سے زیادہ پاکستان کا کردار اہم ہے۔

ان کی تحقیقات کے مطابق بھی امریکی عافیہ کو پاکستان کی تحویل میں دینے پر راضی ہیں۔ عافیہ کی بے گناہی اور معصومیت کی ساری دنیا قائل ہو چکی ہے اور اب جب کہ امریکی انتظامیہ نے عافیہ کی رہائی کے لیے خود رابطہ کیا ہے بلکہ خط تحریر کرنے کی رہنمائی بھی دی ہے تو حکمرانوں کو وقت ضایع نہیں کرنا چاہیے۔ وزیراعظم پاکستان میاں نواز شریف نے بھی عافیہ کی والدہ عصمت صدیقی سے 2013 میں برسر اقتدار آنے کے فوراً بعد عافیہ کو 100 دن میں وطن واپس لانے کا وعدہ کیا تھا۔ اس وعدے کے ایفا کا وقت آچکا ہے۔ حکمرانوں کے ایک خط سے قوم کی معصوم بیٹی کی 14 سالہ اذیت ناک قید کا خاتمہ اور جلد وطن واپسی ممکن ہوسکتی ہے۔

اداریہ ایکسپریس نیوز

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s